×

آئیے بات کرتے ہیں اور آگے چلتے ہیں، حکومت کی طرف سے پی ڈی ایم کو مذاکرات کی باقاعدہ پیش کش کر دی گئی، حکومتی نمائندوں کا پریس کانفرنس میں اعلان – .

اسلام آباد (این این آئی)وفاقی وزیر سائنس وٹیکنالوجی فواد چوہدری نے اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کو پارلیمان میں مذاکرات کی پیش کش کرتے ہوئے کہا ہے کہ اپوزیشن اپنی ٹکراؤ کی پالیسی پر نظر ثانی کرے، عمران خان اور حکومت کہیں نہیں جارہی ہے اور نہ ہی آپ بھیج سکتے ہیں، ہم سمجھتے ہیں

مذاکرات اور رابطوں کے دروازے کھلے رہنے چاہئیں، آئیے بات کرتے ہیں اور آگے چلتے ہیں،نواز شریف کا بیانیہ اب پنجاب میں نہیں بک سکتا ،،مریم نواز کی تقریر صرف والد ، چچا اور بھائی پر تھی ،وزیراعلیٰ کو اچکزئی کی پنجاب میں پابندی عائد کردینی چاہیے۔

پیر کو معاون خصوصی شہباز گل کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہاکہ لاہور کا شکریہ ادا کرنا چاہتے ہیں کہ پی ڈی ایم کے جلسے کو مسترد کیا ،انہوں نے جلسے کو ناکام کر کے بتایا ہے کہ وہ کس کے ساتھ ہیں ؟۔

وفاقی وزیر نے کہاکہ پی ڈی ایم کا جلسہ ہماری سوچ کی بنیاد کے خلاف ہے ،پی ڈی ایم کبھی کامیاب نہیں ہوگی ۔ انہوںنے کہاکہ فوج کے خلاف جو عوام کو بھڑکایا جا رہا ہے عوام ہرگز اس کا ساتھ نہیں دینگے اور لاہور جلسہ یہ وجہ تھی کہ ناکام ہوا ۔

انہوںنے کہاکہ محمود اچکزئی ایک مشن پر ہیں ،یہ پاکستان کے مخالف ہیں یہ وفاق کے مخالف ہیں یہ اعلیٰ کار ہیں ،وہ پنجاب میں پنجاب کے خلاف بات کرتے ہیں وہ وفاق کے خلاف بات کرتے ہیں ان کا کام ہی یہ ہے۔

انہوںنے کہاکہ (ن) لیگ کی عزت پنجاب کی وجہ سے ہے،یہ پنجاب کی بے عزتی (ن )لیگ کے ایم این اے اور ایم پیز نے مسکراتے مسکراتے سنی،سعد رفیق کچھ روز پہلے کہہ رہے تھے جاگ پنجابی پنجابی، جب محمود اچکزئی نے یہ بات کی خواجہ سعد رفیق کھانسی کا شربت پی رہے تھے، انہوںنے کہاکہ ذوالفقار

علی بھٹو نے پیپلز پارٹی کی بنیاد لاہور میں رکھی،پاکستان کی بقا میں سب سے زیادہ خون پنجابیوں کا بہا ہے ،(ن )لیگ کی قیادت کی خاموشی نے پنجابیوں اور پاکستانیوں کا دل توڑا ہے۔

انہوںنے کہاکہ ایک بیرونی ایجنٹ ا ٓکر لاہور میں جلسہ کرے اور ان کے خلاف باتیں کریں تو ہمارا گلہ تو پی ڈی ایم سے بنتا ہے ،پی ڈی ایم کی خاموشی نے ہم سب کا دل لاہوریوں کا دل تھورا ہے ،مسلم لیگ ن نے پنجاب کی پیٹھ میں پہلے بھی وار کیا تھا۔

فواد چوہدری نے کہاکہ مریم نواز نے تقریر کا مقصد کچھ بھی نہیں تھا ،بس وہ اپنی لیڈر شپ پر برستی رہی ہیں ،پی ڈی ایم کا جلسہ اس تحریک کی ناکامی کا ثبوت تھا ،ان کی ناکامی پورے ملک نے دیکھی ہے ،ملک میں سیاسی استحکام بہت ضروری ہے ،ہم نے پاکستان کی سیاست کو بہتر بنانا ہے ،یہ تمام لوگ تو پارلیمنٹ کا حصہ ہی نہیں ہیں ان کا مقصد ملک میں سے جمہوریت ختم کرنا ہے ،ابو بچاو مہم بہت بری طرح سے ان کی ناکام ہو چکی ہے ۔

انہوںنے کہاکہ پارلیمنٹ میں موجود لوگوں کو اپنی سٹریٹجی کے اوپر نظر ثانی کرنے کی ضرورت ہے ۔ انہوںنے کہاکہ ہمارے لیے ان کا دھرنہ دینا کوئی فکر کی بات نہیں ہے ،وزیراعظم عمران خان بتا چکے پارلیمان ایک بہترین مقام ہے ہم سے بات تو کی جائے۔

انہوںنے کہاکہ پنجاب تمام صوبوں کے لیے اجناس کی سبسڈی دے رہا ہے ۔ ایک سوال پر انہوںنین کہاکہ مریم نواز، فضل الرحمن وغیرہ تو پارلیمنٹ کا

حصہ ہی نہیں ،پارلیمنٹ کے اندر جو لوگ ہیں انہیں پارلیمان کی بات کرنی چاہیے ،ملک کے اندر سیاسی استحکام آنا چاہیے اس کی ضرورت ہے ،الیکٹورل اصلاحات نہ کرنے میں تو حکومت کا فائدہ ہے ۔

انہوںنے کہاکہ ہم اپوزیشن سے کہنا چاہ رہے ہیں کہ اپنی پالیسی پر نظر ثانی کریں۔فواد چوہدری نے کہاکہ مریم نواز کی تقریر میں کوئی ایجنڈا نہیں تھا، کیا جنرل پاشا اور جنرل ظہیر نے فوجی یونٹس بھیجی تھیں؟حکومت آپ کی تھی آپ نے وہاں لاکھوں لوگ دیکھے،اس طرح کے حیلے بہانے اب نہیں چلیں گے ۔

انہوںنے کہاکہ یہ اس مشن پر ہیں کہ پارلیمانی نظام ختم ہو،یہ چاہتے ہیں نظام لپیٹا جائے تو ان کی باری آئے،پارلیمنٹ میں موجود جماعتوں کو الگ سے سوچنا ہوگا۔

انہوںنے کہاکہ ہمیں کوئی مسئلہ نہیں آپ دسمبر اور جنوری چاند کے نیچے گزاریں،اس کے باوجود ہم مذاکرات کیلئے تیار ہیں۔

انہوںنے کہاکہ الیکشن ریفارمز کا فائدہ حکومت کو نہیں اپوزیشن کو ہوگا،حکومت کہیں نہیں جارہی، آپ چاہتے ہیں تو کوشش کر لیں۔

شہباز گل نے کہاکہ ہم سمجھتے تھے اکیلے نواز شریف ہی ایجنڈے پر ہیں ،پنجاب کی سرزمین نے سات نشان حیدر حاصل کیے ہیں،یہ پنجاب ہی ہے جس کے دو ٹکرے ہوئے،ہم نے ملک کی خاطر ہر چیز کھو دی،اچکزئی صاحب کے والد ہی ہسٹری ہے،یہ جدی پشتی پاکستان کے خلاف ہیں ،نوازشریف کی بیٹی نے ان کو پلیٹ فارم دیا ان کا دائولگ گیا،(ن

)لیگ کے ایم این ایز سے کہتا ہوں ان کے پیچھے نہ چلیں ،جو ایم این اے ایک ہزار بندہ جلسے میں نہیں لا سکا اسے استعفیٰ دے دینا چاہیے۔

انہوںنے کہاکہ یہ شریفوں کے راج کا آخری دن تھا، لاہور میں شریفوں کی داستان دفن ہوگئی،پیپلزپارٹی اپنے چیئرمین سے پوچھیں وہ کن کاموں میں لگ گئے،کیا وہ پیپلز پارٹی میں ہی ہیں یا ن لیگ میں وائس چیئرمین بن گئے۔

انہوںنے کہاکہ میرجعفر اورمیر صادق جومحموداچکزئی ہیں میں ان کی مذمت کرتاہوں ۔ شہباز گل نے کہاکہ جس طرح مریم صفدرنے تباہی کی، پی ٹی آئی کو اب کچھ کرنے کی ضرورت نہیں۔

فواد چوہدری نے کہاکہبلوچستان میں محسن داوڑکاداخلہ بند ہے،وزیراعلیٰ کومحموداچکزئی کاداخلہ پنجاب میں بندکردیناچاہیے،دوتین دن میں سیاسی درجہ حرارت میں کمی آتی نظر آئیگی۔

۔۔۔۔

اپنا تبصرہ بھیجیں